Siyasi Manzar
راجدھانی

محبوب الٰہی حضرت نظام الدین اولیاء کے 720ویں عرس شریف کے اختتام پر کابینہ کے وزیر عمران حسین نے بطور مہمان خصوصی شرکت کی

نئی دہلی، 5 نومبر: دہلی حکومت کے کابینہ وزیر عمران حسین نے محبوب الٰہی حضرت نظام الدین اولیاء کے 720 ویں پانچ روزہ عرس شریف کی اختتامی تقریب میں بطور مہمان خصوصی شرکت کی۔ اس موقع پر درگاہ حضرت نظام الدین اولیاء کے چیف انچارج سید کاشف علی نظامی نے کہا کہ ملک میں امن اور ہم آہنگی کے لیے خصوصی دعائیں کی گئیں۔ مہمانوں کا استقبال سید کاشف علی نظامی نے بھی کیا۔اس موقع پر ایم ایل اے پروین کمار، عرس کمیٹی دہلی حکومت کے چیئرمین ایف آئی اسماعیلی، دہلی اقلیتی کمیشن کے سابق چیئرمین ذاکر خان، کارپوریشن کونسلر سمیر احمد، سرو سماج راشٹریہ مہاسنگھ کے قومی صدر طاہر صدیقی، فیس گروپ کے چیئرمین ڈاکٹر مشتاق انصاری، پولیٹیکل فارچونس گروپ کے ایڈیٹر اور دیگر موجود تھے۔ مستقیم خان، نہرو وہار بلاک کانگریس کمیٹی کے صدر علیم انصاری، سابق کونسلر رمیش پنڈت، سینئر صحافی معروف رضا، عام آدمی پارٹی کے ضلع سکریٹری وقار چودھری، دہلی پردیش کانگریس کمیٹی ہیومن رائٹس اینڈ لیگل سیل کے جنرل سکریٹری ہریش گولا ایڈوکیٹ، آل انڈیا ایجوکیشن مومنٹ سکریٹری۔ محمد الیاس،کانگریس لیڈر طارق صدیقی، سماجی کارکن لائق انصاری، ایف آئی سی سی آئی کے سکریٹری سلیم انصاری، ڈولفن فٹ ویئر کے سی ایم ڈی سید فرحت علی، سائی سہارا سمیتی کے صدر اشوک نیتاری، محمود حسن ایم پی، نیاز منصوری وغیرہ معززین نے بھی محبوب الٰہی دربار پر حاضری دی۔ عرس کے دوران بہت خوبصورت نظارہ دیکھنے کو ملا۔ پورے درگاہ احاطے کو پھولوں اور روشنیوں سے سجایا گیا تھا، جہاں درگاہ کمیٹی کی جانب سے مختلف مقامات پر لنگر اور قوالیوں کا اہتمام کیا گیا تھا۔ ہمیشہ کی طرح یہاں بھی تمام مذاہب کے پیروکار نظر آئے۔ درگاہ احاطے میں مجموعی طور پر باہمی ہم آہنگی کا ایک بہترین ماحول دیکھا جا سکتا ہے۔پایا زرین کو بھی قوالیوں سے لطف اندوز ہوتے دیکھا گیا۔اس موقع پر وزیر عمران حسین نے کہا کہ تمام لوگ بغیر کسی مذہبی تفریق کے پیر نبی اور اولیائے کرام کے دربار سے مستفید ہوتے ہیں۔ میں نے محبوب الٰہی کی بارگاہ میں پورے ملک کی ترقی و خوشحالی کے لیے دعا بھی کی۔ایم ایل اے پروین کمار نے کہا کہ بابا کی عدالت میں آج میری پہلی پیشی نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ آپسی ہم آہنگی اور بھائی چارے کا جو ماحول یہاں درگاہ احاطے میں نظر آتا ہے وہ پورے ملک میں ہونا چاہیے۔ تب ہی ہمارا ملک صحیح معنوں میں ترقی کی راہ پر گامزن ملک کہلائے گا۔سید کاشف علی نظامی نے کہا کہ ہمیشہ کی طرح اس سال بھی ملک کی مختلف ریاستوں اور بیرون ملک سے زائرین اپنی خواہشات کے ساتھ دربار محبوب الٰہی پہنچے۔ روزانہ ہزاروں زائرین کے لیے یہاں لنگر کا بھی انتظام کیا گیا تھا۔ مشہور قوال بشمول دیگر قوال نظامی برادران، صوفی برادران ہمسار حیات، چاند برادران نے بھی قوالیاں پیش کر کے اپنی موجودگی کا احساس دلایا۔ ملک کی مختلف ریاستوں سے غیر ملکی یاتری بھی بابا کے دربار پر حاضری کے لیے پہنچے۔فیس گروپ کے چیئرمین ڈاکٹر مشتاق انصاری نے کہا کہ محبوب الٰہی کے دربار کا پیار بھرا منظر ہم آہنگی کی مثال ہے کیونکہ اہل وطن مل جل کر رہنا چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وطن محبت پر چلتا ہے اور یہ بات سب جانتے ہیں کہ صوفی خانقاہوں کے ذریعے ہی ملک و دنیا میں محبت پھیلی ہے۔

Related posts

مودی حکومت ترقی کی رفتار میں رکاوٹ بنی: راہل گاندھی

Siyasi Manzar

:JAMIAT ULEMA E HINDجمعیت علماء ہند کے ہیڈ آفس دہلی میں دوروزہ ورکشاپ پروگرام کا انعقاد

Siyasi Manzar

Former Union Minister Salman Khursheed : گہلوت کی قیادت میں اس بار راجستھان کی عوام راج نہیں، رواج بدلیں گے:ڈاکٹر اعظم بیگ

Siyasi Manzar

Leave a Comment