Siyasi Manzar
قومی خبریں

ووٹنگ کے بعد بولے پرکاش راج، ’نفرت اور ملک کو بانٹنے والوں کے خلاف دیا میں نے ووٹ‘

پرکاش راج نے کہا کہ نفرت اور تقسیم کی سیاست کی وجہ سے جو ہم نے پچھلی دہائی میں دیکھی ہے میں نے اس کے خلاف ووٹ دیا ہے۔ میں نے اپنے حلقے سے ایک اچھے نمائندے کو ووٹ دیا ہے

نئی دہلی،26اپریل (ایجنسیاں) لوک سبھا الیکشن 2024 کے دوسرے مرحلے میں آج (26 اپریل) کو 13 ریاستوں میں 88 سیٹوں پر ووٹنگ ہو رہی ہے۔ اس کے ساتھ ہی کرناٹک میں آج 14 سیٹوں پر ووٹنگ ہو رہی ہے۔ ایسے میں جنوبی ہند کی فلم انڈسٹری کے مشہور اداکار بھی اس میں جوش و خروش سے حصہ لے رہے ہیں اور اپنا ووٹ ڈالنے جا رہے ہیں۔ اس دوران بی جے پی کے خلاف آواز اٹھانے والے اداکار پرکاش راج نے بھی بنگلورو کے پولنگ بوتھ پر اپنا ووٹ ڈالا۔پرکاش راج نے اپنا ووٹ ڈالنے کے بعد خبر رساں ایجنسی اے این آئی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ میرا ووٹ میرے حق کے لیے ہے، میرا یہ اختیار ہے کہ میں منتخب کروں کہ کون میری نمائندگی کرے گا، کون پارلیمنٹ میں میری آواز بنے گا۔ اداکار پرکاش راج کے لیے امیدوار کا انتخاب کرنا بہت ضروری ہے۔ یہ اس بات کا اعلان ہے کہ آپ کس پر آپ بھروسہ کرتے ہیں۔اداکار پرکاش راج نے مزید کہا کہ میں نے اس امیدوار کو ووٹ دیا جس پر میں یقین کرتا ہوں، جو منشور وہ لائے ہیں اور ان کی تبدیلی کے وعدے پر میں یقین کرتا ہوں۔ نفرت اور تقسیم کی سیاست کی وجہ سے جو ہم نے پچھلی دہائی میں دیکھی ہے میں نے اس کے خلاف ووٹ دیا ہے۔ میں نے ان لوگوں کے خلاف ووٹ دیا ہے جو تقسیم کر رہے ہیں۔ میں نے اپنے حلقے سے ایک اچھے نمائندے کو ووٹ دیا ہے۔واضح رہے کہ لوک سبھا انتخابات کے دوسرے مرحلے میں 13 ریاستوں میں 89 لوک سبھا سیٹوں پر ووٹنگ ہو رہی ہے۔ جس میں آسام، بہار، چھتیس گڑھ، کرناٹک، کیرالہ، مدھیہ پردیش، مہاراشٹر، منی پور، راجستھان، تریپورہ، اتر پردیش، مغربی بنگال اور جموں و کشمیر شامل ہیں۔

Related posts

Shaheen Group of Institutions: میں چاہتی ہوں کہ ہمارے ادارے شاہین سے بھی کچھ رمیشاقمر نکلیں جو اپنی پرواز سے شعرو ادب کی بلندیاں بھی حاصل کریں:مہرسلطانہ

Siyasi Manzar

مایہ ناز عالم دین مولانا نیاز احمد مدنی کی رحلت قوم وملت کے لئے ایک عظیم خسارہ

Siyasi Manzar

وزیراعلیٰ نے ہمیر پور ضلع کے متاثرہ خاندانوں کو 14 کروڑ روپے جاری کئے

Siyasi Manzar