Siyasi Manzar
علاقائی خبریں

مودی حکومت اپنی اسکیموں کو نافذ کرنے میں امتیازی سلوک نہیں کرتی: جمال صدیقی

  اقلیتیں ممتا دیدی کی جابرانہ پالیسیوں سے ناراض ہو کر اور وزیر اعظم مودی کے ترقی یافتہ ہندوستان کی ضمانت سے متاثر ہو کر بی جے پی میں شامل ہو رہی ہیں : جمال صدیقی
 کولکاتا(پریس ریلیز )بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے لوک سبھا انتخابات کے لیے اپنی تیاریاں تیز کردی ہیں۔  بی جے پی اقلیتی محاذ کے قومی صدر جمال صدیقی دو روزہ دورے پر مغربی بنگال پہنچے۔  اقلیتی محاذ کے ریاستی صدر چارلس نندی کے زیر اہتمام پارٹی کے مختلف پروگراموں میں جمال صدیقی مہمان خصوصی تھے۔  انہوں نے آئندہ لوک سبھا انتخابات کی تیاریوں کے سلسلے میں مورچہ کے ریاستی اور ضلع سطح کے عہدیداروں کے ساتھ جائزہ میٹنگ کی۔
  قومی صدر جمال صدیقی، جو مغربی بنگال کے دورے پر ہیں نے باروئی پور میں پارٹی دفتر میں اقلیتی محاذ کے ریاستی صدر چارلس نندی کے زیر اہتمام انچارج کوانچارج جائزہ میٹنگ کی۔  میٹنگ کے دوران انہوں نے فرنٹ کے آئندہ پروگرام اقلیتی "سنیہ سمواد” مہم کی تیاریوں کا جائزہ لیا۔
 میڈیا سے بات چیت کے دوران جمال صدیقی نے کہا کہ اقلیتی بھائی بہن ممتا دیدی کی جابرانہ پالیسیوں سے پریشان ہو کر اور وزیر اعظم نریندر مودی کے ترقی یافتہ ہندوستان کی ضمانت سے متاثر ہو کر بی جے پی میں شامل ہو رہے ہیں۔
انہوں نے بتایا کہ اقلیتی "سنیہ سمواد” مہم کا انعقاد بی جے پی کے اقلیتی محاذ کی طرف سے کیا جائے گا۔اس پروگرام میں اقلیتی برادری سے تعلق رکھنے والی کھیلوں سے تعلق رکھنے والی شخصیات، متاثر کن افراد اور خواتین سے استفادہ کرنے والوں کے ساتھ بات چیت شامل ہوگی۔  اس مہم میں وزیر اعظم نریندر مودی کے ’’ریفارم پرفارم اینڈ ٹرانسفارم‘‘ کے منتر کو فروغ دینا ہوگا۔ پارٹی کے اقلیتی محاذ کے کارکنان لوگوں تک یہ بات پھیلائیں گے کہ مودی حکومت اپنی اسکیموں کو لاگو کرنے میں امتیازی سلوک نہیں کرتی، فرنٹ کے کارکنان کو معلومات فراہم کریں گے۔ جن دھن یوجنا، اجوالا یوجنا، شوچلے یوجنا، کسان سمان یوجنا، پردھان منتری آواس یوجنا، بیٹی پڑھاؤ بیٹی پڑھاؤ وغیرہ کے بارے میں لوگوں کو بتانا اور سمجھانا کہ حکومت نے ان اسکیموں کو نافذ کرنے میں کبھی امتیازی سلوک نہیں کیا۔  یہ ون انڈیا، گریٹر انڈیا کے نظریے کے ذریعے حب الوطنی، قوم پرستی اور ایک دوسرے سے جڑے ہوئے نظریات کو بھی فروغ دے گا۔  اس سے اس حقیقت کو بھی فروغ ملے گا کہ بی جے پی اجتماعی انصاف کے ساتھ کسی کی خوشنودی کے بجائے سب کی ترقی پر یقین رکھتی ہے۔

Related posts

تلنگانہ اسمبلی انتخابات میں کانگریس کو انڈین یونین مسلم لیگ غیر مشروط حمایت دے گی

Siyasi Manzar

بی جے پی اقلیتی مورچہ پی ایم مودی کی قیادت میں اقتدار کی ہیٹ ٹرک بنانے میں مصروف

Siyasi Manzar

ایمان کے بغیر کوئی بھی عمل قابلِ قبول نہیں۔ سعود اختر سلفی

Siyasi Manzar

Leave a Comment